PDA

View Full Version : Aitbar Sajid



  1. Kuch Khuwab Hein Jin Ko Likhna Ha
  2. Rukhsati....
  3. Tere jaisa mera bhi haal tha na sukoon tha na qaraar tha
  4. ابھی آگ پوری جلی نہیں ، ابھی شعلے اونچے اٹھے نہیں
  5. Kaha us nay bharosa dil pe itna nahe kertay
  6. Kabhi nazrain milanay main zamanay beet jatay hain
  7. Jo mera or tumhara waqt guzra hansne rone me
  8. Us simt chalay ho to bas itna use kehna
  9. Us Ne Kaha Ke Ishq Ka Nasha Utar Gaya...
  10. Mai kisey suna raha hoon yeh ghazal muhabbaton ki
  11. Chahat ki Rehguzar mein Tijaaret Nahi Karo
  12. Jo khayal they na qayas they wohi log mujh sey bichar gaye
  13. Ham Uss Faza
  14. Khuda jaane tumhaare zehen mai kia hai
  15. Tujh se bechar k aankh ko num kis liye kare
  16. Khuda jaane tumhaare zehen mai kia hai
  17. Tujhey Main Bhool to Jata
  18. Kuch Roz Bohat Dil Tarpey Ga
  19. Woh jo daway-daar hai shehar ka, k main sub he ka nabz shanaas hoon
  20. Humain Awaz Day Laina
  21. تمہیں جب کبھی ملیں فرصتیں،مرے دل سے بوجھ اتار دو
  22. کبھی دامن کبھی پلکیں بھگونا کس کو کہتے ہیں
  23. کتنی بدل چکی ہے رت ، جذبے بھی وہ نہیں رہے
  24. اب شوقِ سفر، خواہشِ یکجائی بہت ہے
  25. ناگنوا اپنا سکون تم مری چاہ میں
  26. صاف جب تک نہ ترے ذہن کے جالے ہوں گے
  27. پھول تھے رنگ تھے لمحوں کی صباحت ہم تھے
  28. رات کچھ یارِ طرحدار بہت یاد آئے
  29. رابطے رشتے نہ دیوار نہ در سے اس کے
  30. نہ پوچھ ہم سے کہ اس گھر میں کیا ہمارا ہے
  31. نہ خط لکھوں نہ زبانی کلام تجھ سے رہے
  32. بچھڑ کر بھی ترے چہرے پہ اطمینان کیسا ہے
  33. نام ور ہیں نہ کوئی شہرتِ فن رکھتے ہیں
  34. راستوں میں کوئی رستہ معتبر ایسا تو ہو
  35. مرے ہم سفر ! تری نذر ہیں مری عمر بھر کی یہ دولتیں
  36. مرا ہے کون دشمن ، میری چاہت کون رکھتا ہے
  37. کوئی تو تھا پسِ ہوا، آخرِ شب کے دشت میں
  38. لب پہ نہ لائے دل کی کوئی بات اسے سمجھا دینا
  39. لو ، خدا حافظ تمہیں کہنے کی ساعت آگئی
  40. کیا دوستوں کا رنج کہ بہتر نہیں ملے
  41. میں جانتا تھا ایسا بھی اک دور آئے گا
  42. میں کسے سنا رہا ہوں یہ غزل محبتوں کی
  43. کشتی کوئی تھی رقص میں کوئی بھنور تھا رقص میں
  44. خلوتوں کا امیں گھر کہاں رہ گیا
  45. کیا وہاں کام مری طاقتِ گفتار کا تھا
  46. حسنِ بیان قصر کا ایسا بھی اہتمام کیا
  47. ایسے نہ تھے ہم اہلِ دل ، اتنے کہاں خراب تھے
  48. ہم اجڑے ہوئے لوگ، ہمیں پیار سے مت دیکھ
  49. بے رنگ ہے ہر غنچہ لب کیا اسے کہنا
  50. سنا ہے اس کے عہد وفا میں ہوا بھی مفت نہیں ملتی
  51. اپنی صفائی میں کوئی ہم نے بیاں نہیں دیا
  52. چلی ہے شہر میں اب کے ہوا ترکِ تعلق کی
  53. چراغِ جاں کو سپرد ہوا بھی اس نے کیا
  54. ڈھونڈتے کیا ہو ان آنکھوں میں کہانی میری
  55. دھوپ کے دشت میں شیشے کی ردائیں دی ہیں
  56. فقط اپنی ضرورت کے لئے غم خوار تھے میرے
  57. ج پھر ستائے گی رات پورے چاند کی
  58. جب حالات تھے میرے عجب دن رات تھے میرے
  59. ہر درد پہن لینا ، ہر خواب میں کھو جانا
  60. جی چاہتا ہے کوئی سخن آشنا بھی ہو
  61. ایک لڑکی نے مرا دیوان خالی کر دیا
  62. بالآخر یہ حسیں منظر مٹا دینا ہی پڑتا ہے
  63. بہت سجائے تھے آنکھوں میں خواب میں نے بھی
  64. اب آنے والی ہے فصلِ بہار ، سوچتے تھے
  65. ایسا نہیں کہ تیرے بعد اہلِ کرم نہیں ملے
  66. بھڑک سکتی ہے ظالم آگ ، پانی میں نہیں رہنا
  67. حیرت ہے کسی نے بھی نوازا نہیں ان کو؟
  68. کوئی تو خواب اکیلا بھی مجھ کو دیکھنے دو
  69. کسی کے پاں کی آہٹ ، کسی کی سرگوشی
  70. ترکِ وفا تم کیوں کرتے ہو؟ اتنی کیا بیزاری ہے
  71. تھی جس سے روشنی ، وہ دیا بھی نہیں رہا
  72. ان دنوں پیاس بہت عام نہیں ہوتی تھی
  73. تو نے تو اے رفیق جاں ، اور ہی گل کھلا دئیے
  74. تجھے بھلا کے جیوں ایسی بددعا بھی نہ دے
  75. بچھڑ گیا ہوں میں تجھ سے تری خوشی کے لئے
  76. نیا اک ہم سفر چاہوں تو آسانی سے مل جائے
  77. ye sham tumhare naam(aitbar sajid)
  78. بھولی لڑکی
  79. ہیں یوں تو بہت آپ کی قربت سے بھی محروم
  80. گریاں ہیں اکیلے درو دیوار ہمارے
  81. فقط اپنی ضرورت کے لئے غم خوار تھے میرے
  82. Mai janta tha hijr mai wo morh aayega
  83. band dareechay, sooni galyaan an-dekhey anjaney log
  84. Raat Uss ne Poocha tha:
  85. Chahat ki Rehguzar mein Tijaaret Nahi Karo
  86. Kisi Din , Chahtey Hain
  87. Shaakh Ki Hatheli Par
  88. Guftugoo Kuch Iss Tarah ki , Zakh'm gehra Kar diya
  89. Bohat Mumkin tha
  90. Bus Ab Tark-e-Ta'aluq ho Chuka to ho Chuka Tum se
  91. Aisa Bhi nahi Jaa'n se Guzar Jaayein gey Ham Log
  92. Tum ne Hi Majboor Kiya Hai
  93. Kehtey they Tum , Raho gey Hamarey Tamaam Um'r
  94. Jaankuni mein Mareez Hasti Hai
  95. Tumehin jab kabhi Milein Fursatein , Merey Dil se Bojh ye Utaar do
  96. Ham Uss Faza mein bhi Jaltey Rahey Kisi ke Liye
  97. Abhi Tak Saada Rakha Hai Yeh Kaaghaz Apni Chaahat ka
  98. Agar kuch Qeemti Lamhey Nikal Aayein kisi Soorat
  99. Iss dil ne Terey Baad Mohabbat bhi nahi ki
  100. Wo Jo Keh Raha Tha Tum Se
  101. Tujh se bechar k aankh ko num kis liye kare
  102. Tere siwa qaraar kisi ne nahee diya..
  103. Uss ne Kaha ke Mujh se Tumhein Kitna Payaar hai
  104. buhat mumkin hay duniya cheen ley mujh sey tairi yaadein
  105. Bil-Aakhir Yeh Haseen Manzar Mita Dena hi Parta Hai
  106. Achanak Phir Bachaya hai Kisi Naadeeda Hasti ne
  107. Jis ne Merey Sapney Loot liye
  108. Kuch Khaab hain
  109. Khuda jaane tumhaare zehen mai kia hai
  110. Aao apna apna sitara dekhte hain.
  111. اعتبار ساجد کی غزل
  112. Kabhi Tu Ny Khud Bhi Socha...A Beautiful Ghazal...!
  113. Humain Awaz Day Laina
  114. ابھی آگ پوری جلی نہیں ، ابھی شعلے اونچے اٹھے نہیں
  115. Us Ne Kaha Ke Ishq Ka Nasha Utar Gaya..
  116. کتنی بدل چکی ہے رت ، جذبے بھی وہ نہیں رہے
  117. کبھی دامن کبھی پلکیں
  118. Udaas !
  119. وہ یکسر مختلف ہے
  120. اک روز کوئی تو سوچے گا
  121. ہم کو کیا اپنے خریدار میسر آتے....اعتبار ساجد
  122. Bholi Larki..Dedicated To All Girls...!
  123. Kitna Pyaar Hai
  124. Bahut Mumkin Tha
  125. Ye Nahi Ke Saare...
  126. Main Kisse Suna Raha Hoon
  127. Chahaton Ke Beshumar
  128. Agar Milna Zaruri Hai
  129. Meri Rooh Mein Jo...
  130. اختلاف
  131. مجھے سارے رنج قبول ہیں اُسی ایک شخص کے پیار میں
  132. بھڑک سکتی ہے ظالم آگ ، پانی میں نہیں رہنا
  133. میرے اعتبار ساجد, میرے بے قرار ساجد
  134. ہمارے بھولنے والے بھی اس عذاب میں ہیں
  135. ہر صبح ارادوں کی دہلیز پہ سو جانا
  136. اب بھلا چھوڑ کے گھر کیا کرتے
  137. جو زندہ شہر اور اجسام کو پتھر میں ڈھالے گا
  138. محبّت میں محبّت کی صفائی دے رہے ہیں ہم
  139. “ سال کی آخری نظم “ -- اعتبار ساجد
  140. قطعہ: کیا ضروری ہے کہ ہاتھوں میں تر اہاتھ بھی ہو
  141. غزل:مجھے سارے رنج قبول ہیں اُسی ایک شخص کے پیار میں
  142. مجھے ایسا لطف عطا کیا۔۔۔
  143. غزل: میں کسے سنا رہا ہوں یہ غزل محبتوں کی
  144. قطعہ:جسے آنسوؤں سے مٹائیں ہم جسے دوسروں سے چھپائیں ہم
  145. مجھے سارے رنج قبول ہیں اُسی ایک شخص کے پیار میں
  146. غمِ زندگی تیری راہ میں
  147. اعتبار ساجدمنتخب نظمیں÷منتخب غزلیں
  148. بالآخر یہ حسیں منظر مٹا دینا ہی پڑتا ہے
  149. ڈھونڈتے کیا ہو ان آنکھوں میں کہانی میری
  150. تمہارے بعد اس دل کا کھنڈر اچھا نہیں لگتا
  151. دکھڑے ہر کسی کے سامنے رونا
  152. مجھے ایسا لطف عطا کیا، جو ہجر تھا نہ وصال تھا
  153. کتنی بدل چکی ہے رُت